☰  
× صفحۂ اول (current) دین و دنیا(مفتی محمد وقاص رفیع) غور و طلب(محمد ندیم بھٹی) دنیا اسپیشل(ڈاکٹر محمد اعجاز تبسم) سپیشل رپورٹ(ایم آر ملک) سنڈے سپیشل(طیبہ بخاری ) فیشن(طیبہ بخاری ) کچن کی دنیا() متفرق(عبدالماجد قریشی) رپورٹ(محمد شاہنواز خان) کھیل(طیب رضا عابدی ) انٹرویوز(مرزا افتخاربیگ) خواتین() خواتین() خواتین() خواتین() دنیا کی رائے(محمد ارسلان رحمانی) دنیا کی رائے(عارف رمضان جتوئی) دنیا کی رائے(وقار احمد ملک)
سنہری دھوپ کے جیسا ترا رنگ روپ اُجلا سا ۔۔۔۔۔۔

سنہری دھوپ کے جیسا ترا رنگ روپ اُجلا سا ۔۔۔۔۔۔

تحریر : طیبہ بخاری

12-08-2019

اُسے کہنا !

کسی بھی خوبصورت شام میں ملنے چلا آئے

مجھے اِک نظم لکھنی ہے

سنہری دھوپ کے جیسا ترا رنگ روپ اُجلا سا

 

دھلے بارش سے دیکھو تو حسیں پیارے نظارے ہیں 

فلک کے استعارے ہیں 

یہ تیری آنکھ جیسے ہیں 

سو اِن سب پر 

مجھے اِ ک نظم لکھنی ہے 

اُسے کہنا مری کی جھومتی چنچل ہوائوں سی 

تری اِن شوخ زُلفوں پر 

مجھے کچھ شعر کہنے ہیں 

نشیلی آنکھ میں تیری شرابوں کی سی مستی ہے 

تری اِ ن نرم پلکوں پر یہ جتنے بھی ستارے ہیں 

مجھے اِن سب کو چھونا ہے 

ترے اِن بند ہونٹوں میں چھپی جو مسکراہٹ ہے 

یہی تو شاعری ہے بس 

مجھے اِ ک نظم لکھنی ہے 

اُ سے کہنا !

تری آنکھیں بہت کچھ بولتی ہیں 

تری باتیں شہد سا گھولتی ہیں 

یہ پھولوں پر گری شبنم ترے گالوں کے جیسی ہے !

چمکتی چاندنی جیسی تری روشن جبیں پر بھی 

مجھے اِ ک نظم لکھنی ہے 

گھنی شاخوں کے پتوں میں چھپا وہ چاند پیارا سا 

ترے چہرے کے جیسا ہے 

ترے اس چاند چہرے پر مجھے کچھ شعر کہنے ہیں 

اُسے کہنا مجھے اِ ک نظم لکھنی ہے 

کسی بھی خوبصورت شام میں ملنے چلا آئے 

صائمہ اظہر کہتی ہیں ’’ محبت کا جذبہ ایک خوبصورت شام جیسا ہی تو ہے ، ایک ایسی خوبصورت شام جس کا انتظار ہر دل کو رہتا ہے۔ ایک ایسا وقت بھی آتا ہے جب یہ شام ہم سے رخصت ہو جاتی ہے پھر ہم احساسات کی دنیا میں اس کی یاد یں سجاتے اور مناتے ہیں ، نت نئی ایسی محفلوں کا اہتمام کرتے ہیں جہاں جذبوں کی قندیلیں روشنیاں بکھیرتی ہیں اور ہم گھنٹوں بیٹھ کر اپنی ہمجولیوں سے یادوں کی پٹاریاں کھولتے اور اپنی اپنی خوبصورت یادوں کا تذکرہ کرتے ہیں ۔

کبھی کبھار تنہائی میں اس خوبصورت شام کا ذکر آئے تو پھر کاغذ اور قلم کو دوست بنانا پڑتا ہے اور وہی شام کے قصے نظم کی صورت میں ڈھلتے جاتے ہیں ۔شاید اسی منظر کشی کو شاعری کہتے ہیں اور وہ الفاط جنہیں ہم اپنے جذبات کا اظہار بناتے ہیں وہ ادب کے پیمانے قرار پاتے ہیں ۔ ماڈلنگ اور شوبز کی دنیا بھی روٹین سے ہٹ کر تیاری ،سجاوٹ اور اہتمام کا نام ہے ۔

ایک ماڈل کو اپنے ملبوسات ، میک اپ اور شخصیت سے دوسروں کو یہ پیغام دینا ہوتا ہے کہ کس طرح اپنی زندگی میں رونق ، انفرادیت اور خوبصورتی کو قائم رکھا جا سکتا ہے ۔ میں نے موسم سرما کے لحاظ سے آپ سب کیلئے چند دلفریب رنگوں اور ڈیزائینز کو منتخب کیا اور یہ کوشش کی کہ میرے فن سے آپ کی زندگی میں ہلکی پھلکی سی ہی سہی پر خوشنما تبدیلی ضرور آئے ۔ امید ہے آج کی ملاقات میں میری یہ ادنیٰ سی کوشش ضرور کامیاب ہو گی ۔ ‘‘ 

گذشتہ شماروں سے پڑھیں

حال اس کا تیرے چہرے پہ لکھا لگتا ہے

...

مزید پڑھیں

وہی گلیاں وہی کوچہ وہی سردی کا موسم ہے

...

مزید پڑھیں