☰  
× صفحۂ اول (current) دین و دنیا(مولانا محمد الیاس گھمن) سپیشل رپورٹ(طاہر محمود) دنیا اسپیشل(محمد ندیم بھٹی) ثقافت(ایم آر ملک) سنڈے سپیشل(طیبہ بخاری ) فیشن(طیبہ بخاری ) کچن کی دنیا() دلچسپ و عجیب(انجنیئررحمیٰ فیصل) صحت(سید عبداللہ) فیچر(پروفیسر عثمان سرور انصاری) روحانی مسائل(مولانا محمد یونس پالن پوری) دنیا کی رائے(وقار احمد ملک) دنیا کی رائے(راحیلہ سلطان)
تیرا آنچل رنگ رنگیلا رنگ رنگ میں باس نئی ۔۔۔۔

تیرا آنچل رنگ رنگیلا رنگ رنگ میں باس نئی ۔۔۔۔

تحریر : طیبہ بخاری

01-19-2020

قتیل شفائی نے کیاخوب کہا تھا کہ

تیرا آنچل رنگ رنگیلا رنگ رنگ میں باس نئی 

میرے من کی آس پرانی تیرے تن کی پیاس نئی 

تُو بگیا کی تتلی بن کر پھول پھول پر جُھولے 

کلی کلی سے پیار بڑھائے رُت رُت کے دُکھ بُھولے 

تیرا جوبن ایک پہیلی تیری آس نِراس نئی 

تیرا آنچل رنگ رنگیلا رنگ رنگ میں باس نئی 

روپ ترنگ میں تیری منہ پھٹ چنچلتا اترائے 

انگ انگ میں سجی سجائی سندرتا بل کھائے 

سنگ سنگ اَن دیکھے سپنوں کی شوبھا لہرائے 

جیون کے ہر موڑ پہ تیری آس رچائے راس نئی 

تیرا آنچل رنگ رنگیلا رنگ رنگ میں باس نئی 

ایک اُڑان سے تو اُکتائے بار بار پر تولے 

ایک چال نہ بھائے تجھ کو قدم قدم پر ڈولے 

اس پر بھی من مُورکھ میرا تیری ہی جے بولے 

میرے ساتھ پرانی چھایا ، کایا تیرے پاس نئی 

تیرا آنچل رنگ رنگیلا رنگ رنگ میں باس نئی 

صائمہ اظہر کہتی ہیں ’’ زندگی قدم قدم پہ اپنے سنگ نئے سبق ، نئی کہانیاں ، نئے انداز ، نئے ساتھی ، نئی خوشیاں اور نئے غم لاتی ہے ۔ زندگی کے ان تمام پہلوئوں میں اپنی شخصیت کے رنگوں کو برقرار رکھنا کوئی آسان کام نہیں ہوتا ۔ آپ کو ہر حال میں اپنی انفرادیت اور اپنے سٹائل کو سنبھال کر رکھنا ہوتا ہے اور ایسا وہی کر پاتے ہیں جو ثابت قدم رہتے ہیں اور اپننے فن اور صلاحیتوں پر بھروسہ رکھتے ہیں۔

مجھے ہر کسی سے میل جول بڑھانے کی عادت نہیں ، دوستوں کی تعداد بھی زیادہ نہیں لیکن جن سے ہم آہنگی ہے ان کیساتھ وقت گزارنا بہت اچھا لگتا ہے ۔ زیادہ تر وقت گھر اور گھر والوں کیساتھ بِتانا اچھا لگتا ہے ، موسم خوشگوار ہو تو سیرو تفریح سے اچھا کچھ نہیں ، کھانا لذیذ ہو تو شوق سے کھاتی ہوں بہت زیادہ کھانا صحت کیلئے نقصان دہ ہوتا ہے ۔ آج ’’دنیا ‘‘ سے ملاقات کے ذریعے آپ سب کیلئے ملبوسات کے چند خوبصورت ٹرینڈز اور کلرز کا انتخاب کیا ہے ، امید ہے آپ کو یہ سب بہت پسند آئیں گے ۔ ‘‘ 

 

گذشتہ شماروں سے پڑھیں