☰  
× صفحۂ اول (current) دین و دنیا(حاجی محمد حنیف طیب) خصوصی رپورٹ(ایم آر ملک) خصوصی رپورٹ(محمد رمضان) عالمی امور(صہیب مرغوب) صحت(ڈاکٹر آصف محمود جاہ ) سنڈے سپیشل(طیبہ بخاری ) فیشن(طیبہ بخاری ) فیچر(پروفیسر عثمان سرور انصاری) کچن کی دنیا() انٹرویوز(مرزا افتخاربیگ) کھیل(عبدالحفیظ ظفر) خواتین(روہاب لطیف) خواتین() خواتین() خواتین() رپورٹ(طاہر محمود) متفرق(آسیہ پری ) متفرق(آمنہ وحید)
خواتین کی بیشتر بیماریوں کا ایک سبب

خواتین کی بیشتر بیماریوں کا ایک سبب

تحریر :

01-26-2020

ہار مونز کے عدم توازن سے انسان میں بہت سے مسائل پیدا ہو جاتے ہیں جو کہ مستقبل میں کئی بیماریوں کا سبب بن جاتے ہیں۔ دراصل ہمارے ہاں ’’پولسٹک اووریز سنڈروم‘‘کی بیماری عام ہے ۔ اس کا مطلب ہار مون کی خرابی ہے۔اس کی وجوہات پر نظر ڈالی جائے توسب سے بڑی وجہ غذا ہے۔یہ بیماری ایک غذائی بگاڑاس وجہ سے بھی ہے کیونکہ ہم وہی نظر آتے ہیں جو ہم کھاتے ہیں۔غذا ہی ہمارے خون کا حصہ بنتی ہے اور اسی سے بیماریاں بھی جنم لیتی ہیں۔

ہمارے ہاں لڑکیاں کھانے میں دودھ کا استعمال نہیں کرتیں اور مرغن غذائیں زیادہ استعمال کرتی ہیں جس کے بعد ورزش تک کرنے کی زحمت گوارا نہیں کرتیں۔ یہی وجہ ہے کہ ان کا وزن بڑھنے لگتا ہے اور ساتھ ہی کیلشیئم کی کمی بھی واقع ہو جاتی ہے۔اگر آج کل کے حساب سے دیکھیں تو اس ضمن میں میتھی بہترین غذا ہے۔لڑکیوں کو چاہیے کہ میتھی کا استعمال زیادہ سے زیادہ کریں کیونکہ ہارمونز کے عدم توازن کی وجہ سے ہی بانجھ پن پیدا ہوتا ہے۔ میتھی کی سبزی کھا لیں یا پھر اس کا قہوہ بنا کر پی لیں۔

چاہے کسی بھی قسم کے ہار مونز میں عدم توازن ہو یہاں تک کہ ان کی وجہ سے مخصوص ایام میں بے قاعدگی ہی کیوں نہ ہو ،تو ایسی صورت میں بینگن کا استعمال زیادہ کریں یا پھر جامن کے پتوں کا قہوہ بنا کر پئیں۔ہارمونز کین عدم توازن کی وجہ سے بڑھنے والے وزن کو کم کرنے کے لیے جامن کے بیج اور میتھی دانہ پیس کر اس کا قہوہ بنا کر پی لیں۔ایسی چیزوں کو جوس کی شکل میں پینے سے زیادہ فائدہ ہوتا ہے،اور اگر ایسا نہ کر سکیں تو پھانک کر پانی بھی پی سکتی ہیں۔اس کے علاوہ غذا کے ساتھ ساتھ چہل قدمی کرنا بھی ضروری ہے۔اگر چہل قدمی تھوڑی تیز رفتاری کے ساتھ کی جائے تو اس سے چربی بھی جلتی ہے۔

آپ کو چاہیے کہ نظامِ ہضم کو تیز بنانے کے لیے مختلف حصوں میں تھوڑا تھوڑا کھا ئیں۔اکثر لڑکیاں شکایت کرتی ہیں کہ میں تو کچھ نہیں کھاتی اس کے باوجود میرے وزن میں اضافہ ہو رہا ہے۔یہ حقیقت بھی ہے کہ وہ واقعی کچھ نہیں کھاتیں لیکن اس نہ کھانے کہ وجہ سے ان میں آئرن کی کمی واقع ہو جاتی ہے جس کے باعث ان کا جگر چربی بنانے لگتا ہے۔لہٰذا کھانا کبھی بھی مت چھوڑیں،اپنی غذا بھر پور لیں ساتھ میں ورزش ضرور کریں۔

بڑی عمر کی خواتین یعنی چالیس سال کی عمر سے زیادہ کی خواتین کو اکثر پیٹ کے اپھارہ پن کا مسئلہ در پیش رہتا ہے اور یہ خواتین صرف پیٹ کا ہی علاج کرواتی ہیں۔جبکہ انہیں چاہیے کہ وہ ہر چھ ماہ میں ایک مرتبہ اپناpapsmear ٹیسٹ لازمی کروائیں۔بیشتر خواتین کو اپھارہ پن کے ساتھ وائٹ ڈسچارج کا مسئلہ بھی در پیش ہوتا ہے ، وہ اس حوالے سے بات کرتے ہوئے گھبراتی ہیں،لیکن ایسا نہ کریں اور ڈاکٹر کو مکمل معلو مات فراہم کریں کیونکہ ہر درد پیٹ کا نہیں ہوتا۔ اگر آپ صبح ٹھیک اٹھتی ہیں لیکن دن گزرنے کے ساتھ آپ کا پیٹ غبارے کی طرح پھولنے لگتا ہے اور سفید پانی بھی آ رہا ہے تو آپ کوچاہیے کہ ڈاکٹر کو لازمی آگاہ کریں۔

اس کے دیسی علاج کے لیے دیسی کیکر اور مصری ملا کر پیس لیں اور دن میں دو سے تین مرتبہ کھائیں۔ جن خواتین کو شوگر ہو وہ مصری کی جگہ میتھی استعمال کریں۔یہ تمام اشیاء ہم وزن ہونی چاہیے۔اس کے علاوہ ایسی خواتین جن کی عمر 40سال سے زائد ہو، انہیں کمر درد کی شکایت بھی ہو سکتی ہے ، وہ اپنا papsmearٹیسٹ لازمی کروائیں۔اس ٹیسٹ سے ایک خاص کینسر کی نشاندہی ہوتی ہے۔لہٰذا ہار مونز کے عدم کے توازن کو ہر گز نظر انداز نہ کریں اور اپنے جسم میں ہونے والی تبدیلیوں پرخاص نظر رکھیں ،کسی بھی قسم کے مسئلے کی صورت میں ڈاکٹر سے ضرور رجوع کریں۔

مزید پڑھیں

سوئیٹر پر لگے روئوں کے چھوٹے چھوٹے گولے دیکھنے میں بہت بُرے لگتے ہیں جنہیں دیکھ کر محسوس ہوتا ہے کہ سوئیٹر بہت پُرانا ہے،جو اکثر ان کپڑوں ...

مزید پڑھیں

کچھ لوگ بہت زیادہ سونے کے عادی ہوتے ہیں،جبکہ بعض لوگ مختلف وجوہات کی بناء پر بے خوابی کا شکار ہو جاتے ہیں۔ دونوں ہی علامات کسی نارمل اورت ...

مزید پڑھیں

کہا جاتا ہے کہ بچے فرشتوں کا روپ ہوتے ہیں ان کے چہرے پر معصومیت اور تازگی سے ہر کسی کو ان کی طرف کشش ہوتی ہے کہ وہ ہر کسی سے پیار اور محبت حا ...

مزید پڑھیں

گذشتہ شماروں سے پڑھیں

کلینزنگ کے آٹھ اصول  چہرے کا قدرتی حسن اور نکھار قائم رکھنے کے لیے اس کی صفائی کا خاص خیال رکھنا ضروری ہے۔  

مزید پڑھیں

چولہا جلاتے وقت یہ خیال رکھیے کہ اس کی لو زیادہ بلند نہ ہونے پائے ،ورنہ آپ کے ہاتھ جھلس جانے کا امکان ہے۔

مزید پڑھیں

بال جاذب نظر شخصیت کے ضامن ہوتے ہیں۔ان کے بارے میں سب سے اہم بات یہ ہے کہ سر کی جلد کے اوپر موجود تمام بال مردہ ہوتے ہیں،یعنی جو بال جلد کے اوپر موجود ہوتے ہیں وہ جلد سے باہر اُگتے ہی مردہ ہو جاتے ہیں۔قدرتی طور پر بال تیس سے ساٹھ کی تعداد میں گر سکتے ہیں۔

مزید پڑھیں