☰  
× صفحۂ اول (current) دین و دنیا(علامہ مفتی ابو عمیر سیف اﷲ سعیدی ) دنیا اسپیشل(صہیب مرغوب) جرم و سزا(سید عبداللہ) صحت(خالد نجیب خان) سنڈے سپیشل(طیبہ بخاری ) فیشن(طیبہ بخاری ) کچن کی دنیا() فیچر(ایم آر ملک) سپیشل رپورٹ(محمد ندیم بھٹی) کھیل(پروفیسر عثمان سرور انصاری) کھیل(عبدالحفیظ ظفر) خواتین(نجف زہرا تقوی)
خواتین کیلئے مفید مشورے

خواتین کیلئے مفید مشورے

تحریر : نجف زہرا تقوی

03-15-2020

سیب کے دس انمول فائدے
سیب اپنی غذائیت کے لحاظ سے دنیا کا مشہور ترین پھل ہے۔میٹھا سیب پہلے درجے میں گرم ،دوسرے میں تر ہے۔بنیادی طور پر اعلیٰ قسم کے سیب کی پیداوار کے لیے سرد آب و ہوا کی ضرورت ہوتی ہے۔
 

جو پہاڑی علاقے سطح سمندر سے تین ہزار فٹ کی بلندی پر واقع ہیں ،وہاں اس پھل کو کاشت کیا جاتا ہے،اور وہیں اس کی اعلیٰ پیداوار ملتی ہے۔سیب میں فاسفورس کے اجزاء موجود ہیں،اسی لیے یہ مقوی دماغ بھی ہے۔ا س میں فولاد کے اجزاء بھی شامل ہیں۔اس لیے اس کا استعمال خون کے ذرات میں اضافہ کرتا ہے اور چہرے کو سرخ و شادا ب بناتا ہے۔
سیب کا چھلکا اُتار کر کھانا ایک فاش غلطی ہے۔اس کے چھلکے کی موٹائی میں وٹامنز کی ایک بڑی مقدار چھپی ہوتی ہے،جو کہ چھلکا اُتارنے پر عموماً ضائع ہو جاتی ہے۔اس لیے ضروری ہے کہ اسے چھلکے سمیت ہی کھایا جائے۔
سیب کھانے سے ہاضمہ کو تقویت ملتی ہے ۔سیب کھانا قبض کشا اثر رکھتا ہے اور اس کے علاوہ جگر کا فعل بھی تیز کرتا ہے۔سیب کا عرق معدے اور انتڑیوں کی بیماریوں کے لیے دافع جراثیم اور دافع بد بو ہے۔گردوں کی صفائی میں اس کی کارکردگی لاجواب ہے۔
معدے کا نظام بہتر بنانے کے لیے
 تازہ سیب کے رس میں سیاہ مرچ،زیرہ اور نمک کا سفوف چھڑک کر پینے سے بھوک میں اضافہ ہوتا ہے اور معدے کو تقویت ملتی ہے۔
سیب کے دیگر فوائد
 سیب قدرے قابض ہوتا ہے،لیکن اس کا مربہ بھوک بڑھاتا ہے۔
سیب دل کو شگفتہ اور دماغ کو ترو تازہ کرتا ہے،اس وجہ سے پریشانی وغیرہ کی صورت میں انسانی جسم میں قوت مدافعت بڑھاتا ہے۔
اگر روزانہ دو سیب کھا کر ایک پائو دودھ صبح نہار منہ پیا جائے تو چھ ہفتوں میں انسانی صحت قابلِ رشک ہو جاتی ہے۔
گردوں کی صفائی کے لیے سیب سے بہتر اور کوئی چیز نہیں ہے۔
سیب کے چھلکوں سے نہایت لذیذ او ر خوشبو دار چائے تیار کی جا سکتی ہے جو چالیس سال سے اوپر کی خواتین و حضرات کے لیے بے حد مفید ہے۔
سیب کے چھلکوں کی چائے میں اگر لیموں اور شہد کا اضافہ کر لیا جائے تو یہ محرقہ بخار کی کمزوریوں کو دور کرتی ہے۔
اگر جوڑوں کے درد والے حضرات یہ چائے استعمال کریں تو انہیں خاصا فائدہ ہوتا ہے۔
سیب دانتوں کو مضبوط کرتا ہے اور اس کے اجزاء دانتوں اور مسوڑھوں میں جذب ہو کر انہیں خاصا مضبوط کرتے ہیں۔
اس کے مسلسل استعمال سے اعصابی کمزوری دور ہوتی ہے۔
سیب ایک عدد لے کر اچھی طرح سے چھیل کر تھوڑا نمک لگا کر صبح نہار منہ تین روز تک کھانے سے اکثر رہنے والے سردرد کی شکایت دور ہو جاتی ہے۔
سیب میں پائے جانے والے فائبرز معدے کی انتڑیوں میں موجود چکنائی کو ختم کر کے کولیسٹرول کی سطح کو کنٹرول کرتے ہیں،او ر آپ کو صحت مند بناتے ہیں۔ایک تحقیق کے مطابق سیب کولیسٹرول کنٹرول کے سبب دل کی شریانوں میں جمع ہونے والی بندش کو بھی دور کرتا ہے۔سیب کے چھلکے میں موجود فینالک کمپائونڈ خون میں شامل ہو کر کولیسٹرول سے بچاتا ہے اور شریانوں میں جمنے والی کثافت ختم کر دیتا ہے۔
غیر متوازن ہارمونز کے نقصان دہ اثرات
PMSایام شروع ہونے سے پہلی کی وہ تکلیف دہ علامتیں ہیں جن میں سینے میں تکلیف محسوس ہونا،تھکاوٹ،پیٹ میں گیس،سر درد،موڈ یا مزاج میں تیزی رونما ہونے والی تبدیلی،افسردگی اور چڑ چڑا پن کے احساسات نمایاں ہوتے ہیں۔یہ تمام علامتیں یہ ظاہر کرتی ہیں کہ خواتین کے جسم میں ہارمون کا توازن بگڑ رہا ہے اور طب کے مطابق74فیصد خواتین غیر متوازن ہارمونز کے مسئلے کا شکار ہوتی ہیں۔ویمنز نیوٹریشنل ایڈوائزری سروس نے اس سلسلے میں دو مرتبہ خواتین کا سروے کیا تھا۔پہلی بار1985اور دوسری بار1996میں کیے گئے سروے سے معلوم ہوا کہ وقت گزرنے کے ساتھPMSکی سنگینی بڑھتی جا تہے ہے۔1996میں کیے جانے والے سروے میں یہ دیکھا گیا کہ ایام شروع ہونے سے پہلے اسی فیصد خواتین میں ایک دم سے موڈ کی تبدیلی،ڈپریشن،فکر،پریشانی اور جارحانہ احساسات نمایاں ہو جاتے تھے اور ان میں سے52فیصد خواتین ایام سے پہلے کے مرحلے میں ان علامتوں سے اتنی زیادہ پریشان تھیں کہ انہوں نے خود کشی پر غور کرنا شرو ع کر دیا تھا۔ڈاکٹر''ماریون اسٹیوارٹ''کے مطابق PMSبیسویں صدی کی بیماری ہے اور اس کی بنیادی وجہ جدید معاشرے میں خواتین کے بدلتے ہوئے کردار کے سبب انہیں اپنی غذائی ضروریات کا پوری طرح ادراک نہ کرنا اور ان پر پڑنے والا بہت زیادہ ذہنی بوجھ ہے۔اگر خواتین اپنے غذائی معمولات میں تبدیلی لائیں،کچھ وقت ورزش کے لیے نکالیں اور ذہنی دبائو سے نمٹنے کے لیے کوئی مئوثر طریقہ کارڈھو نڈ لیں تو صرف چار ماہ میں یہ ساری علامات غائب ہو سکتی ہیں۔
دورِ جدید کی خواتین میں ہارمونز کے غیر متوازن ہونے کی وجہ سے اینڈو میٹریوسیس کی شکایات بھی بہت عام ہو گئی ہیں ۔یہ ایک ایسی طبی کیفیت ہے جسم میں رحم کے اندرونی حصے میں تشکیل پانے والے خلیات جسم کے دیگر اعضاء میں بھی بننے لگتے ہیں جہاں ان کی کوئی ضرورت نہیں ہوتی اور نہ ہی تعلق ہوتا ہے۔گیارہ سے ساٹھ سال کی ہر دس میں سے ایک ایسی خاتون میں یہ شکایت دیکھی جا رہی ہے جو بار آوری کی عمر میں ہوتی ہے۔اینڈو میٹریوسیس کی علامتیں مختلف ہو سکتی ہیں لیکن سب سے زیادہ قابلِ ذکر علامت انتہائی تکلیف دہ ایام ہیں۔اس دوران درد کی شدت اتنی زیادہ ہوتی ہے کہ مریضہ خود کو ایک طرح سے معذور سمجھنے لگتی ہے۔اس کے لیے معمول کے مطابق زندگی گزارنا مشکل ہو جاتا ہے۔جو خواتین اینڈو میٹر یوسیس کا شکار ہوتی ہیں ان میں سے آدھی ماں بننے کی صلاحیت سے محروم ہو جاتی ہیں اور بانجھ پن کی یہ انتہائی اہم وجہ قرار دی جاتی ہے۔اگرچہ اینڈو میٹر یوسیس کی شکایتیں خواتین میں پہلے بھی ہوتی تھیں لیکن اب ان میں جو اضافہ دیکھا گیا ہے وہ پہلے کبھی نہیں تھا۔
پھل اپنے وقت پر کھائیں
آپ نے اکثر لوگوں کو شکایت کرتے سنا ہو گا کہ میں نے تربوز کھایا تو پیٹ خراب ہو گیا،یا کسی وقت کیلا کھانے سے طبیعت بوجھل ہو گئی وغیرہ وغیرہ۔اس کی وجہ در اصل یہی ہے کہ جب آپ کھانے کے بعد پھل کھاتی ہیں تو وہ کھانے کے ساتھ مل کر گیس پیدا کرتے ہیں۔جس کی وجہ سے آپ کو مختلف تکالیف کا سامنا کرنا پڑتا ہے۔بالوں کو سفید ہونا،آنکھوں کے نیچے حلقے،یاداشت کی خرابی وغیرہ یہ سب نہ ہوں اگر آپ پھلوں کو خالی پیٹ کھانا شروع کر دیں۔ویسے تو اس میں کچھ غلط نہیں کہ پھل کھانے کے بعد کھایا جائے،لیکن یہ زیادہ بہتر ہے کہ پھلوں کو کھانے سے پہلے یعنی خالی پیٹ ہی استعمال کیا جائے۔اس کی سب سے بڑی وجہ پھلوں میں موجود قدرتی شکر ہے جو فوری طور پر جسم میں جذب اور ہضم نہیں ہوتی۔اس کے علاوہ زیادہ تر پھلوں میں90سے95فیصد تک پانی ہوتا ہے۔جس کی وجہ سے اس پھل کو ہضم ہونے کے لیے تقریباً پندرہ سے بیس منٹ چاہیے ہوتے ہیں۔اگر پھل کھانا کھانے کے فوراً بعد کھا لیا جائے تو وہ طبیعت میں بھاری پن پیدا کر دیتا ہے اور کھانا ہضم ہونے میں مشکل ہوتی ہے،اور اگر یہی پھل کھانے سے پندرہ بیس مٹ پہلے کھائے جائیں تو وہ ہضم بھی ہو جائے گا اور طبیعت بھی ہلکی پھلکی رہے گی۔
کیوی
 کہنے کو تو یہ چھوٹا سا پھل ہے،لیکن یہ پوٹاشیم،میگنیشیم،وٹامن ای اور فائبر کا بہترین ذریعہ ہے۔اس میں سنگترے سے دوگنی مقدار میں وٹامن سی ہوتا ہے۔
سیب
روزانہ ایک سیب کھائو اور ڈاکٹر بھگائو۔ویسے تو اگر دیکھا جائے تو سیب میں وٹامن سی کم ہوتا ہے،لیکن اس میں اینٹی آکسیڈینٹس اور فلیو نائیڈز موجود ہوتے ہیں جو کہ وٹامن سی کی کارکردگی کو بڑھا دیتا ہے۔اس سے پیٹ کے کینسر،ہارٹ اٹیک اور سٹروک کا خطرہ بھی کم ہو جاتا ہے۔
سٹرابیری
یہ مکمل طور پر حفاظتی پھل ہے۔اس میں اینٹی آکسیڈینٹ کی بڑی مقدار موجود ہوتی ہے اور یہ پوری جسم کو کینسر پیدا کرنے والے اثرات سے بچانے کے ساتھ ساتھ خون کی شریانوں کو بند ہونے سے روکتا ہے۔
سنگترہ
 یہ پھل ایک بہترین دوا بھی ہے۔روزانہ دو سے چار سنگترے کھائے جائیں تو نزلہ اور کھانسی آپ سے دور بھاگ جاتا ہے،اور اگر جسم میں پتھری ہو تو اسے بھی ختم کر دیتا ہے۔اس کے علاوہ آنتوں کے کینسر سے بھی بچاتا ہے۔
تربوز
سب سے بہترین جسم کو ٹھنڈا کرنے والا پھل ہے۔جس میں92فیصد پانی پایا جاتا ہے۔اس کے علاوہ اس میں بہت بڑی مقدار میں نگوٹا تھائیں ہے جو انسان کے مدافعتی نظام کو فعال کرتا ہے اور یہ لائیکو پین کا سب سے اہم ذریعہ ہے جو کہ کینسر سے لڑنے کی طاقت پیدا کرتا ہے۔اس کے علاوہ تربوز میں وٹامن سی اور پوٹاشیم بھی پایا جاتا ہے۔
امرود اور پپیتا
 یہ دونوں وٹامن سی حاصل کرنے کا بہترین ذریعہ ہیں۔امرود میں فائبر بھی پایا جاتا ہے،جو کہ قبض سے نجات دلاتا ہے۔پپیتی میں کیروٹین بڑی مقدار میں موجود ہوتا ہے جو کہ آنکھوں کے لیے بہترین ہے۔
بیوٹی ٹپس
اب خوبصورت جلد کے لیے آپ کو پارلر جانے یا فیشل کروانے کی ضرورت نہیں،آپ اپنے حسن کو انڈے کی مدد سے بھی دوبالا کر سکتی ہیں۔چکنی جلد کے لیے انڈے کی زردی اور چکنی جلد کے لیے سفیدی بہترین ہے۔زردے یا سفیدی کو پھینٹیں اور چہرے اور گردن پر لگا کر آرام سے لیٹ جائیں۔بیس منٹ بعد چہرہ دھو لیں۔انڈہ جلد میں کھنچائو پیدا کرنے میں مدد دیتا ہے اور غذائیت فراہم کرتا ہے۔تھکا دینے والا دن گزارنے کے بعد اگر چہرے پر انڈے کا ماسک لگایا جائے تو بہت آرام ملتا ہے۔انڈے کی سفیدی حیرت انگیز طور پر چہرے کی صفائی کرتی ہے۔انڈے کو شیمپو کرنے سے نصف گھنٹہ قبل سر پرلگائیں یہ آپ کے بالوں کے لیے خصوصی کنڈیشنر کا کام کرے گا۔
چائے: چائے کے قہوے کو ٹھنڈا کر لیں اور روئی بھگو کر آنکھوں پر لگائیں۔اس سے آنکھوں کی تھکاوٹ دور ہو جائے گی۔چائے کی پتی کا استعمال باقاعدگی سے کرتی رہیں۔پتی میں پانی ڈال کر ابال لیں اور قہوہ ٹھنڈا کریں۔شیمپو کرنے کے فوراً بعد بالوں کو قہوے سے دھو لیں۔اس سے بالوں کی چمک میں اضافہ ہو گا۔مسلسل استعمال سے قہوے کے جیسا ہلکا شیڈ بھی بالوں کا حصہ بن جاتا ہے۔
نمک: نیم گرم پانی میں تھوڑ ا سا نمک ڈال کر آنکھیں دھونے سے آنکھیں شفاف اور چمکدار ہوجاتی ہیں۔اس پانی میں روئی بھگو کر بھی آنکھوں پر رکھی جا سکتی ہے۔یہ آنکھوں کی تھکاوٹ دورن کرنے میں بے حد مدد گار ہے۔گرم پانی میں تین کھانے کے چمچ نمک ڈال کر پائوں میں رکھ کر بیٹھ جائیں ،تھکاوٹ اور درد سے آرام ملے گا۔
کاسٹر آئل: یہ بیرونی استعمال کے لیے بہترین چیز ہے۔ اس سے جلد پر انتہائی خوشگوار اثر پڑتا ہے۔رات کو سونے سے قبل سر میں نرم ہاتھوں سے کاسٹر آئل کی مالش کریں اور صبح دھو لیں۔کاسٹر آئل کے متعلق کہا جاتا ہے کہ جلدکی تازگی کا مسلمہ ذریعہ ہے۔کاسٹر آئل کو سر میں اچھی طرح لگانے کے بعد ،پانی میں گرم تولیہ بھگو کر اسے نچوڑ کر سر کے گرد باندھ لیا جائے تو کاسٹر آئل سر کی جلد کے اندر تک اثر کرے گا۔اس کے استعمال سے پلکیں سیاہ ،لمبی اور گھنی ہو جاتی ہیں۔
بالوں کو ساری زندگی سیاہ رکھنے کے لیے درمیانے سائز کا ایک کچا انار لے کر چھُری سے اس کا سر کاٹ لیں اور اس سوراخ میں آدھا تولہ پارہ ڈال دیں۔اس کے بعد انار کا سر جو کاٹا تھا دوبارہ دھاگے کے ساتھ اچھی طرح باند دیں اور اس انار کو کسی سایہ دار جگہ کے نیچے لٹکا دیں۔سات دن بعد جب انار کھولیں گے تواس کا کُشتہ تیار ہو چکا ہو گا۔اسے کسی شیشی میں نکال کر رکھ لیں۔ہفتے میں ایک بار سونے سے پہلے ذرا سا کُشتہ اور کالے تلوں کا تیل ہتھیلی پر ڈال کر بالوں میں ہلکا سا مساج کر کے لگا لیں اور صبح اُٹھ کر بال کسی اچھے شیمپو سے دھو لیں۔ہفتے میں ایک بار ایسا کرنے سے بال ہمیشہ کالے رہیں گے اور کبھی سفیدی نہیں آئے گی۔اگر سفید بالوں پر بھی لگائیں گے تو ان کے نیچے سے آنے والے نئے بال بالکل سیا ہ ہوں گے۔
 

گذشتہ شماروں سے پڑھیں

جس طرح ہر چیز کے مثبت اور منفی پہلو ہوتے ہیں اسی طرح سوشل میڈیا کے بھی مثبت اور منفی پہلو اس کے استعمال پر منحصر ہیں۔ اگر مثبت پہلو کی بات کی جائے تو سوشل میڈیا کئی لحاظ سے ہر ایک کے لیے مفید ہے۔ چند پہلو درج ذیل ہیں۔    

مزید پڑھیں

بچوں کے لیے بہترین غذائیں بچوں کے لیے کھانے کی چیزیں خریدتے وقت غذائیت کو مدِ نظر رکھنا ضروری ہے۔والدین مارکیٹ میں متعارف ہونے والی نئی غذائوں یا نئے ذائقوں کو آزمانا چاہتے ہیں۔    

مزید پڑھیں

لہسن کے چھلکے میں چھپے صحت کے راز سکارف پہننے کے دلکش اور منفرد انداز ٹوٹکے    

مزید پڑھیں