☰  
× صفحۂ اول (current) خواتین دنیا اسپیشل کھیل سائنس کی دنیا ادب روحانی مسائل فیشن کیرئر پلاننگ خصوصی رپورٹ صحت دین و دنیا
فیس واش تیار کریں گھر پر

فیس واش تیار کریں گھر پر

تحریر :

03-10-2019

اکثر لڑکیاں میک اپ تو کسی نہ کسی طرح کر لیتی ہیں ،لیکن کنسیلر لگانے کے فن سے آگاہ نہیں ہوتیں۔آئیں آج ہم آپ کو کنسیلر لگانے کا طریقہ بتاتے ہیں۔داغوں کو چھپانے کے لیے باریک برش کی مدد سے کنسیلر کو صرف نشان والی جگہ پر لگائیں،نہ کہ اسے ارد گرد پھیلا لیں۔کنسیلر کا رنگ،فائونڈیشن کا ہم رنگ ہوتا ہے

تاہم اگر رنگ بالکل میچ نہ ہو سکے تو کنسیلر ایک شیڈ ہلکا لے سکتی ہیں،کیونکہ اگر آپ نے فائونڈیشن سے گہرا کنسیلر شیڈ استعمال کیا تو یہ چہرے کے نشانات کو مزید نمایاں کر دے گا۔آنکھ کے نیچے کی جگہ ڈھیلی ہو کر لٹک جائے تو اس کیفیت کو ''انڈر آئی بیگز''کہا جاتا ہے۔

ایسا دیر تک جاگنے اور کم روشنی میں پڑھنے کے سبب ہو سکتا ہے۔ان آئی بیگز کو کنسیل کرنا خاصا مشکل ہوتا ہے۔تاہم استعمال شدہ ٹی بیگز کو ٹھنڈا کر کے آنکھ پر رکھنے سے آنکھوں کی سوجن میں حیرت انگیز حد تک افاقہ ہوتا ہے۔چند ایک ایسی ترکیبیں بھی موجود ہیں جن کی مدد سے آئی بیگز کو کافی حد تک چھپایا جا سکتا ہے۔کری لیکوئڈ کنسیلر کو آنکھ کے نیچے لگائیں کیونکہ یہ کریم اس حصے کی نازک جلد میں بہت اچھی طرح جذب ہو جاتی ہے

 ۔کریم کو نقطوں کی صورت میں آنکھوں کے نیچے اور ناک کے گوشوں پر لگائیں اور انگلی کی مدد سے ہلکے سے تھپتھپا کر اسے جذب کر لیں۔اسے آپ بھنوئوں کے نیچے والی ہڈی پر بطور ہائی لائٹر بھی لگا سکتی ہیں،اور ناک یا دہانے کے ارد گردواقع شکنوں کو چھپانے کے لیے بھی استعمال کر سکتی ہیں۔اس سے نہ صرف آپ کی رنگت دمک اٹھے گی بلکہ آپ ایک دم ترو تازہ دکھائی دیں گی۔

 کنسیلر آپ کے لیے واقعی ایک جادوئی پراڈکٹ ثابت ہو سکتی ہے۔اگر آپ اسے لگانے کے سنہری اصو ل یا درکھیں ۔ہارڈ کنسیلر کو اگر آنکھوں کے گوشوں پر نمایاں جھریاں چھپانے کے لیے استعمال کیا جائے تو یہ مزید نمایاں نظر آنے لگیں گی۔جبکہ کوئی کریمی اور پتلی پراڈکٹ جھائیوں اور دھبوں کو چھپانے کی بجائے پھسل کے نیچے بہہ جائے گی۔اس لیے آپ کے درست انتخاب میں ہی اصل خوبصورتی چھپی ہے۔

پائوڈرـ : زیادہ تر خواتین کا میک اپ پائوڈر کے بغیر مکمل نہیں ہوتا۔اس لیے مارکیٹ میں کئی اقسام کے پائوڈر دستیاب ہیں۔یاد رکھیں کہ پائوڈر کا رنگ منتخب کرتے ہوئے بھی اپنی رنگت سے اس کی مطابقت کا خیال رکھیں۔لوز پائوڈر آپ کے چہر ے پر لگائے گئے فائونڈیشن بیس کو سیٹ کرنے کا کام دیتاہے،لیکن یہ آپ کے چہرے پر الگ سے لگا ہوا نہیں دکھنا چاہیے بلکہ اس کا صحیح رزلٹ تب ملتا ہے جب یہ مکمل طور پر آپ کے میک اپ کا حصہ دکھائی دے۔اسے لگانے کے بعد کلر کاسمیٹکس برش روانی کے ساتھ آپ کے چہرے پر چلتا ہے اور کوئی لائن یا دھبہ وغیرہ نہیں بنتا۔آئی شیڈو لگانے سے پہلے آنکھوں کے نیچے لوز پائوڈر لگائیں،یہ آئی شیڈو سے جھڑ کر گرنے والے ذرات کو مقناطیس کی طرح پکڑ لے گا،پھر ایک نرم برش کی مدد سے آپ اس پائوڈر کو صاف کر سکتی ہیں۔

 اس سے آپ کے چہرے پر کوئی نشان نہیں بننے پائے گا۔پائوڈر لگانے کی تکنیک کا پہلا اصول یہ ہے کہ آپ کا پائوڈر برش اچھاہونا چاہیے۔یہ جتنا اچھا ہو گا اتنی ہی بہتر فنیشنگ آئے گی۔اپنے برش کواس جادوئی پراڈکٹ میں ڈبونے کے بعد اضافی پائوڈر کو جھٹک دیں،پھر چہرے پر ہلکے ہاتھ سے لگائیں یہ آپ کے چہرے کااس طرح حصہ بن جائے گا جیسے آپ نے کچھ لگایا ہی نہ ہو۔ جلد قدرت کا عطا کردہ انمول تحفہ ہے اور بال آپ کی خوبصورتی کا تاج ہیں۔ان کی حفاظت و نگہداشت کے لیے ہربل پروڈکٹسکا استعمال کریں۔ہوم میڈ سوپ اور ہربل شیمپوز کے استعمال کے نتائج بلاشبہ فوری طور پر بر آمد نہیں ہوتے،لیکن یہ ہر قسم کیغیر ضروری کیمیائی اجزاء سے پاک اور جلد و بالوں کی خوبصورتی کے لیے آئیڈیل ضررو ثابت ہوتے ہیں۔ خشک جلد کے لیے سوپ:خشک جلد کی حامل خواتین کے لیے ہوم میڈ صابن بنانے کا طریقہ درج ذیل ہے،جس کے لیے مندرجہ ذیل اشیاء درکار ہیں۔کوئی عام سا بیوٹی سوپ کد و کش کر لیں۔یہ ایک کھانے کا چمچ ،دودھ2/1کپ،شہد ایک کھانے کا چمچ،لیموں کا رس ایک کھانے کا چمچ اور گلیسرین ایک کھانے کا چمچ لے کر ان تمام اجزاء کو پتیلے میں ڈال کر چولہے پرچڑھا دیں۔ہلکی آنچ پر اتنا پکائیں کہ کدو کش کیا ہوا سوپ حل ہو جائے۔

 حل ہونے کے بعد چولہے سے اتار کر سوپ کے سانچے میں ڈال کر ٹھنڈا کر نے کے لیے رکھ دیں۔پوری رات کے لیے چھوڑ دیں،صبح چیک کریں گے تو آپ کا سوپ تیار ہو گا۔اس سے صبح،دوپہر اور شام منہ دھوئیں۔ایک ہفتے میں آپ کی جلد کے ساتھ ساتھ رنگت بھی نکھر جائے گی۔ چکنی جلد کے لیے سوپ: چکنی جلد تو قدرت کا انمول تحفہ ہوتی ہے۔چکنی جلد والی خواتین اگر اپنی جلد کی حفاظت طریقے سے کریں تو ہمیشہ جوان نظر آئیں گی

 ۔ایسی جلد کی حامل خواتین کے چہرے عموماً جھریوں سے پاک ہوتے ہیں۔یہی وجہ ہے کہ چکنی جلد ،خشک جلد کی نسبت زیادہ جوان اور پُر کشش نظر آتی ہے۔جہاں چکنی جلد کے بے شمار فوائد ہیں وہیں اگر آپ نے اپنی جلد کا خیال نہ رکھا تو آپ کو بے شمار جلدی مسائل بھی پیش آ سکتے ہیں۔ان مسائل سے بچنے کے لیے میں آپ کو ہوم میڈ سوپ بنانے کا طریقہ بتا رہی ہوں۔سوپ تیار کرنے کے لیے عام بیوٹی سوپ کدو کش کیا ہوا ایک کھانے کا چمچ،عرق گلاب1/2 کپ، گلاب کی پتیاں1/4کپ،شہد ایک چائے کا چمچ اور مالٹے کے چھلکے پسے ہوئے ایک چائے کا چمچ لے کر ان اجزاء کو دیگچی میں ڈال کر ہلکی آنچ پر اتنا پکائیں کہ سوپ حل ہو جائے۔حل ہو جانے پر چولہے سے اتار کر رکھ دیں اور ایک دن بعد سوپ جم جائے تو اسے استعمال کریں۔

 بہترین نتائج کے لیے صابن چہرے پر لگا کر دو منٹ تک چہرے کا مساج کریں،بہت جلد آپ کا چہرہ چمک اٹھے گا۔ نارمل جلد کے لیے سوپ: نارمل جلد رکھنے والی خواتین کو لکی کہا جاتا ہے،کیونکہ ا ن کی جلد چکناہٹ اور حد درجہ خشکی سے آزاد ہوتی ہے۔چونکہ جلد اگر چکنی ہو تو بھی مسائل کا سامنا رہتا ہے اور اگر خشک ہو تو بھی جلد کے ساتھ ان گنت مسائل در پیش رہتے ہیں۔چکنائی یا خشکی ایک حد کے اندر رہے تو ہی جلد کے لیے موزوں ہوتی ہے،

 لیکن اگر یہ تجاوز کر جائے تو آپ کی جلد کے لیے نقصان دہ ثابت ہو تی ہے اور اگر نارمل جلد والی خواتین اپنی سکن کی دیکھ بھال با قاعدگی سے کریں تو ان کے چہرے پر مزید نکھار نمایاں ہو گا۔نارمل جلد کی حامل خواتین کے لیے ہوم میڈ سوپ بنانے کا طریقہ در ج ذیل ہے۔کوئی سا کدو کش کیا ہوا بیوٹی سوپ ایک کھانے کا چمچ،شہد ایک چائے کا چمچ،روغن بادام ایک چائے کا چمچ،کیسو کے پھول ایک کھانے کا چمچ،عرق گلا2/1کپ۔ان اجزاء کو برتن میں ڈال کر چولہے پر چڑھا دیں اور ہلکی آنچ پر اتنا پکائیں کہ سوپ حل ہو جائے ۔تیار ہو جانے پر کسی محفوظ جگہ پر رکھ دیں۔ایک دن بعد صابن جم جائے تو اس کو حسبِ ضرورت استعمال کریں ۔جلد کی خوبصورتی کے لیے دن میں تین بار ضرور استعمال کریں۔