☰  
× صفحۂ اول (current) دین و دنیا دنیا اسپیشل خصوصی رپورٹ متفرق سنڈے سپیشل فیشن صحت شوبز ادب کچن کی دنیا غور و طلب افسانہ
Dunya Magazine
Loading...
Loading...
Loading...

دیگر خصوصی مضامین اور مستقل سلسلے

’’صحابہ کرامؓ کی مقدّس جماعت کا ایک ایک فرد آنحضورؐ کا مرید ہے لیکن سیّدنا فاروق اعظمؓ حضورؐ اکرم کی مراد ہیں کیونکہ آپؐ نے حضرت عمرؓ کو اپنے اللہ سے خود مانگ کر لیا تھا‘‘

مزید پڑھیں

آج یکم ستمبر 2019ء ہے ۔1965ء کی صورتحال سوچی سمجھی عالمی سازش تھی۔ جنگ کی کھچڑی 1964ء میں پکنا شروع ہوئی تھی۔ جب بھارت کی انتہا پسندانہ سوچ دونوں ممالک میں تصادم کا سبب بن گئی تھی ۔

مزید پڑھیں

میری جنم بھومی کراچی تو نہیں لیکن زندگی میںکئی مرتبہ روشنیوں کے اس شہر میں جانے کا موقع ملا ہے، کبھی اپنے ابا جان کی انگلی پکڑ کر، تو کبھی خود اپنے بچوں کی انگلیاں پکڑ کر۔پھر وقت نے پلٹا کھایا،اور سب کچھ بدل کر رکھ دیا۔جس خوبصورت شہر میں کبھی نوکری کرنے کی تمنا ہوا کرتی تھی اب اسی شہرمیں رہنے والوں کی سب سے بڑی خواہش یہ ہوتی ہے کہ کسی طرح سے شہر کے گلی کوچوں میں پڑا کچرا صاف ہو جائے،شہر بھر میں جو بو پھیلی ہوئی ہے وہ کسی طرح سے کم ہو جائے۔

مزید پڑھیں

آئے روز بڑھتی ہوئی مہنگائی نے جہاں دیگر طبقات کو متاثر کیا ہے وہاں غریب لوگ بالخصوص مزدور انتہائی متاثر ہوا ہے۔ پیٹ کا دوزخ بھرنے کیلئے یہ کن مشکل مراحل سے گزرتاہے یہ دیکھ کر دل کانپ اٹھتا ہے۔ بے روزگاری تیزی سے بڑھنے اور ملازمتوں کا فقدان اور سفارش نہ ہونے کی وجہ سے گریجویٹ نوجوان بھی بعض اوقات مزدوری کرنے پر مجبور ہو چکا ہے۔

مزید پڑھیں

٭:خون اپنا ہو یا پرایا نسلِ آدم کا خون ہے آخر ۔۔۔

مزید پڑھیں

عروج خان کہتی ہیں ’’مجھے سمجھ نہیں آتی بعض مغربی ممالک میں حجاب کو کیوں تنقید کا نشانہ بنایا جا تاہے جبکہ خواتین حجاب میں خود کو محفوظ اور باوقار محسوس کرتی ہیں۔

مزید پڑھیں

زندگی میں جہاں دولت کمانا بہت اہم ہے وہیں اس دولت کا لطف اُٹھانا اس کے کمانے سے بھی کہیں زیادہ ضروری اور اہم ہے۔ اکثر لوگ کامیابی کے سفر میں یہ بھول جاتے ہیں کہ اس پورے عمل میں لازم ہے کہ ہم دوسرے امور کے ساتھ ساتھ اپنے جسم کا بھی بھرپور خیال رکھیں۔

مزید پڑھیں

قیامِ پاکستان کے حوالے سے وطن عزیز میں بڑی معیاری فلمیں بنائی گئیں اور وہ باکس آفس پر کامیاب بھی ہوئیں۔

مزید پڑھیں

یہ سب سوچ کر میرا دماغ گھومنے لگا۔ اتنے میں ہم ایک نسبتاً بڑے گائوں میں پہنچ گئے۔مجھے اندازہ ہوا کہ جو کچھ جفورے میں ہوا تھا اس کی خبر یہاں پہنچ چکی تھی۔ گائوں کے لوگ باہر سڑک پر جمع تھے۔

مزید پڑھیں

اینکوچلی ونگز

اجزاء:سویا ساس3/4کپ،اورنج جیم3/4کپ،اورنج جوس3/4کپ،کٹے دھنیے کے پتے1/2کپ،کٹی ہری پیاز1/3کپ،تیل1/4کپ،اینکو چلی چار چائے کے چمچ،پسا زیرہ چار چائے کے چمچ،کچلا ہوا لہسن چار جوئے،چکن ونگز ایک کلو،پسی کالی مرچ3/4چائے کے چمچ

ترکیب:بلینڈر میں تمام اجزاء ڈال کر بلینڈ کر لیں،پھر ونگز کو بڑے پلاسٹک بیگ میں رکھ کر ایک کپ میں میری نیٹ کیے ہوئے اجزاء بھریں۔اب اس بیگ کو ایک بڑے پیالے میں رکھ کر دو سے چار گھنٹے کے لیے فریج میں رکھیں۔

ساس کے لیے:اب باقی میری نیٹ کیے ہوئے اجزاء کو چھوٹے ساس پین میں ڈالیں،پھر اسے ابال لیں اور ہلکے ہلکے چمچہ ہلاتے رہیں۔اگر چاہیں تو آنچ ہلکی کر دیں۔اب 1/2کپ ساس کو ایک چھوٹے پیالے میں ونگز برش کے لیے نکال لیں،پھر ونگز کو بیگ سے نکال کر میری نیٹ کو ضائع کر دیں اور ونگز پر کالی مرچ لگائیں۔اب ونگز کو ہلکی آنچ پر ڈھک کر بیس سے پچیس منٹ کے لیے اتنا گرل کریں کہ گوشت گلابی نہ رہے اور وقفے سے پلٹتے رہیں۔اب ونگز کو ساس سے برش کر لیں اور گرل سے نکال کر سرو کریں۔

مزید پڑھیں

ایک دن اپنے گھر کے باہر کھڑا تھا کہ کیا دیکھتا ہوں کہ ایک صاحب اپنے کئی ملازمین کو گائیڈ کر رہے ہیں۔ایک ملازم کے ہاتھ میں لمبا سا پائپ ہے جس سے فوارے کی طرح پانی نکل رہا ہے۔ وہ نہ یہ دیکھ رہے ہیں کہ پانی کے چھینٹے ہر راہگیر پر پڑ رہے ہیں اور نہ یہ سوچ رہے ہیں کہ پانی کی دولت ضائع نہ کی جائے ۔

مزید پڑھیں

دایا دیندار ہانپتا ہوا چوہدری خیر محمد کے ڈیرے پر پہنچا۔جیسے ہی سانس بحال ہوئیں تازہ حقے پر ٹوٹ پڑا۔ ڈیرے پر جلتی دوپہر میں مستریوں کے ساتھ ساتھ مزدوروں کا تانتا بندھا تھا۔ٹھیکیدار فضل قریشی بھی راج مستری اجمل شاہ کے ساتھ حویلی میں جاری کام پر مول تول میں لگا ہوا تھا۔بھادوں کی تلخ دوپہریں مستریوں اور مزدوروں کے لیے کسی امتحان سے کم نہ تھیں۔

مزید پڑھیں

اسم ’’محمدؐ ‘‘کا احترام

اورنگ زیب عالمگیربڑا مشہور مغل شہنشاہ گزرا ہے اس نے ہندوستان پر تقریباً 50سال حکومت کی تھی۔ ایک دفعہ ایک ایرانی شہزادہ اسے ملنے کے لئے آیا۔ بادشاہ نے اسے رات کو سلانے کا بندوبست اس کمرے میں کرایا جو اس کی اپنی خوابگاہ سے منسلک تھا۔ ان دونوں کمروں کے باہر بادشاہ کا ایک بہت مقرب حبشی خدمت گزار ڈیوٹی پر تھا۔ اس کا نام محمد حسن تھا۔ اور بادشاہ اسے ہمیشہ محمد حسن ہی کہا کرتا تھا۔ اس رات نصف شب کے بعد بادشاہ نے آواز دی’’حسن! ‘‘۔ نوکر نے لبیک کہا اور ایک لوٹا پانی سے بھرکر بادشاہ کے پاس رکھا اور خود واپس باہر آگیا۔ ایرانی شہزادہ بادشاہ کی آواز سن کر بیدار ہوگیا تھا اور اس نے نوکر کو پانی کا لوٹا لیے ہوئے بادشاہ کے کمرے میں جاتے دیکھا اور یہ بھی دیکھا کہ نوکر لوٹا اندر رکھ کر باہر واپس آگیا ہے۔ اسے کچھ فکر لاحق ہوگئی کہ بادشاہ نے تو نوکر کو آواز دی تھی اور نوکر پانی کا لوٹا اس کے پاس رکھ کر واپس چلا گیا ہے۔ یہ کیا بات ہے؟صبح ہوئی شہزادے نے محمد حسن سے پوچھا کہ رات والا کیا معاملہ ہے؟ مجھے تو خطرہ تھا کہ بادشاہ دن نکلنے پر تمہیں قتل کرادے گا کیونکہ تم نے بادشاہ کے کسی حکم کا انتظار کرنے کی بجائے لوٹا پانی سے بھر کر رکھ دیا اور خود چلے گئے۔ نوکر نے کہا:’’عالی جاہ !ہمارے بادشاہ حضوراکرم ﷺ کا اسم گرامی بغیر وضو نہیں لیتے۔ جب انہوں نے مجھے حسن کہہ کر پکارا تو میں سمجھ گیا کہ ان کا وضو نہیں ہے ورنہ یہ مجھے ’’محمد حسن‘‘ کہہ کر پکارتے ہیںاس لیے میں نے پانی رکھ دیا تاکہ وہ وضوکرلیں۔ شہزادہ یہ سن کر حیران رہ گیا۔

مزید پڑھیں

حجاب اور عبادت ساتھ ساتھ

دنیا فیشن

ماڈل : عروج خان
فوٹو گرافی : عامر چشتی
میک اپ : K R CREW